کوکھ جنی کی کوکھ - ڈاکٹر رابعہ خرم درانی

سات مہینے تمھاری بیٹی نے غسل نہیں کیا، اور تمھیں پتا نہیں چلا.\r\nبی بی غلطی ہوگئی. میرے کو بس پتا نئیں چلا. \r\nنہیں، جھوٹ بولتی ہو تم. تم شامل ہو اس کام میں بیٹی کے ساتھ. \r\nسسکتی سولہ سالہ بیٹی.. امی میں تو کہیں باہر بھی نہیں گئی. اسکول بھی نئیں جاتی. یہ کیا ہے؟ \r\nڈاکٹر.. بی بی تم مریم ع نہیں .. یہ آسمان سے نہیں اترا .. تم نے ہی اسے کہیں سے اٹھایا ہے .. سات ماہ کا پیٹ لے کر پھرنے والی لڑکی جس نے خبر کو پیٹ ظاہر ہونے تک چھپا کر رکھا .. اس کی معصوم بے خبری پر اش اش کرنے کو دل چاہتا ہے.\r\nجو ماں اتنے مہینے بیٹی کی آنتوں میں کیا پل رہا ہے؟ سے بےخبر رہی، وہ ماں بھی اپنی بیٹی کے ساتھ شامل ہے. \r\nاور ایسی بیٹی اپنی ماں کے ہاتھوں کنڈی میں پروئے چارے کی مانند وہ چھوٹی سی مچھلی ہے جسے بڑی مچھلی کا شکار کرنے کے لیے ماہر شکاری کانٹے میں پرو کر زمانے کے تالاب میں پھینک دیتا ہے.. \r\n\r\nبہرحال، اب یہ سات ماہ کا حمل ہے اور مبارک ہو کہ یہ بھی تم جیسی تمہاری بیٹی ہے.. دیکھ لو (الٹرا ساؤنڈ) مشین بتا رہی ہے.. دو ماہ جاتے ہیں کہ اس کی پیدائش ہو جائے گی. خدا کے لیے ایک غلطی تم کر چکی ہو، اب دوسری غلطی کر کے قاتل مت بننا .. اسے مارنا مت .. کسی خالی گود کو سونپ دینا ..\r\n \r\nجو ماں اپنی کوکھ جنی کی کوکھ سے لاعلم رہتی ہے، وہ اپنی بیٹی کی مجرم ہے.

Comments

ڈاکٹر رابعہ خرم درانی

ڈاکٹر رابعہ خرم درانی

دل میں جملوں کی صورت مجسم ہونے والے خیالات کو قرطاس پر اتارنا اگر شاعری ہے تو رابعہ خرم شاعرہ ہیں، اگر زندگی میں رنگ بھرنا آرٹ ہے تو آرٹسٹ ہیں۔ سلسلہ روزگار مسیحائی ہے. ڈاکٹر ہونے کے باوجود فطرت کا مشاہدہ تیز ہے، قلم شعر و نثر سے پورا پورا انصاف کرتا ہے-