ٹرمپ کی جیت سے کیا سیکھیں؟ ڈاکٹر عاصم اللہ بخش

ڈاکٹر عاصم اللہ بخش ٹرمپ صاحب اور سیکرٹری کلنٹن کے انتخابی معرکہ اور اس کے نتائج سے میرے نزدیک سیکھنے کی بات یہ ہے کہ عوام بہرحال سمجھدار ہوتے ہیں. انہیں کوئی جتنا مرضی باور کرواتا رہے کہ آپ کا مسئلہ یہ ہے، وہ اسی کو اپنا مسئلہ سمجھتے ہیں جو دراصل ان کا مسئلہ ہوتا ہے.\nپھر جو ان کی نبض پر ہاتھ رکھ کر کہہ دے کہ ہاں بھائی یہ ہے آپ اصل مسئلہ اور میں اسے حل کروں گا، تو پھر وہ آؤ تاؤ نہیں دیکھتے …. ووٹ ڈال آتے ہیں اسے.\nیہ ٹھیک ہے کہ اس مشق میں ان کے بے وقوف بن جانے کا بھرپور امکان موجود رہتا ہے لیکن یہ امکان بھی تو ہوتا ہے کہ جو ان کا مسئلہ سمجھتا ہے وہ کچھ نا کچھ تو کرے گا، ان کے لیے نہ سہی اپنے اقتدار کی خاطر ہی سہی . بالفرض ایسا نہ بھی ہو، پھر بھی بے وقوف بنایا جانا اس سے کہیں بہتر ہے کہ آپ بیوقوفی کا رضاکارانہ مظاہرہ کرتے ہوئے اسے ووٹ ڈال آئیں جسے اندازہ ہی نہیں کہ آپ کے شب و روز کس درد کا درماں تلاش کرتے بسر ہوتے ہیں.\nامریکی عوام 2007/8ء کے معاشی دھچکے سے سنبھل نہیں پائے. لاکھوں کے سر کی چھت چھن گئی، ان گنت بے روزگار ہو گئے. اُدھر ہیلری کلنٹن اس پر بھی راضی نہیں تھیں کہ ایک اوسط امریکی ورکر کی فی گھنٹہ مزدوری میں فی الفور قابل قدر اضافہ کر دیا جائے.\nدوسرا، امریکہ کی عالمی جنگیں ختم ہونے میں نہیں آ رہیں اور فوجی جوانوں کی اموات اور ان کے اپاہج ہونے سے بہت سے گھرانے متاثر ہوئے ہیں. سینیٹر اور پھر فارن سیکرٹری کی حیثیت سے ان جنگوں کے آغاز و انجام سے متعلق ان کا ریکارڈ بھی کچھ ایسا شاندار نہیں تھا.\nڈونلڈ ٹرمپ کو معلوم تھا کہ مسئلہ کیا ہے، اور چونکہ وہ ایک ”آزاد“ امیدوار تھے ان پر عوام کی زبان بولنے پر کچھ پابندی نہیں تھی اس لیے انہوں نے ان نکات کو خوب اٹھایا، اور وہ بھی اس زبان و آہنگ میں جو عوام کے کانوں کو مانوس لگے. سیکریٹری کلنٹن چونکہ اسٹیبلشمنٹ اور وال اسٹریٹ کی امیدوار تھیں اس لیے ان پر کچھ آدابِ زباں بندی لاگو تھے، یہی ان کے لیے راستے کا پتھر ثابت ہوا.\nجو عوام کا درد پہچاننے اور اس کو زبان دینے کی قابلیت رکھے گا، اقتدار تک پہنچنے کا در اس پر کبھی بند نہیں ہو سکتا.\nبھٹو صاحب نے یہ بات جان لی تھی. اسی لیے ان کی زندگی تک پیپلز پارٹی کے معاملات میں ان کا یہ نعرہ اپنی حقیقی شکل میں موجود رہا… طاقت کا سرچشمہ عوام ہیں !

Comments

FB Login Required

ڈاکٹر عاصم اللہ بخش

ڈاکٹر عاصم اللہ بخش کی دلچسپی کا میدان حالاتِ حاضرہ اور بین الاقوامی تعلقات ہیں. اس کے علاوہ سماجی اور مذہبی مسائل پر بھی اپنا ایک نقطہ نظر رکھتے ہیں اور اپنی تحریروں میں اس کا اظہار بھی کرتے رہتے ہیں.

Protected by WP Anti Spam